Powered by Blogger.

ایک دردناک تحریر


★★★ایک دردناک تحریر 😔
میں دوپہر کو پورچ میں بیٹھا تھا کہ اس دوران ایک السیشن نسل کا خوبصورت لیکن انتہائی تھکا ماندہ سا چھوٹا کتا کمپاؤنڈ میں داخل ہوا. اس کے گلے میں پٹہ بھی تھا. میں نے سوچا ضرور کسی اچھے گھر کا پالتو کتا ہے. میں نے اسے پچكارا تو وہ پاس آ گیا. میں نے اس پر محبت سے ہاتھ پھیرا تو وہ دم ہلاتا وہیں بیٹھ گیا.
.
بعد میں میں جب اٹھ کر اندر گیا تو وہ کتا بھی میرے پیچھے پیچھے کمرے میں چلا آیا اور کھڑکی کے پاس اپنے پاؤں پھیلا کر بیٹھا اور میرے دیکھتے دیکھتے سو گیا.
میں نے بھی کمرے کا دروازہ بند کیا اور صوفے پر آ ن بیٹھا. تقریبا ایک گھنٹے نیند کے بعد کتا اٹھا اور دروازے کی طرف گیا تو اٹھ کر میں نے دروازہ کھول دیا. وہ باہر نکلا اور چلا گیا.
.
اگلے دن اسی وقت وہ پھر آ گیا. کھڑکی کے نیچے ایک گھنٹہ سویا اور پھر چلا گیا.
.
اس کے بعد وہ روز آنے لگا. آتا، سوتا اور پھر چلا جاتا.
.
میرے ذہن میں تجسس دن با دن بڑھتا ہی جا رہاتھا کہ اتنا شریف، سمجھدار اور پیار کرنے والا کتا آخر ہے کس کا اور کہاں سے آتا ہے؟
.
ایک روز میں نے اس کے پٹے میں ایک چٹھی باندھ دی. جس لکھ دیا: آپ کا کتا روز میرے گھر آکر سوتا ہے. یہ آپ کو معلوم ہے کیا؟
.
اگلے دن جب وہ پیارا چھوٹا سا کتا آیا تو میں نے دیکھا کہ اس کے پٹے میں ایک چٹھی بندھی ہوئی ہے. اس نکال کر میں نے پڑھا.
.
اس میں لکھا تھا: یہ بہت اچھا پالتو کتا ہے، میرے ساتھ ہی رہتا ہے لیکن میری بیوی کی دن رات کی جھک جھک ،بک بک کی وجہ وہ سے سو نہیں پاتا اور روز ہمارے گھر سے کہیں چلا جاتا ہے.

اگر آپ اجازت دے دیں تو میں بھی اس کے ساتھ آ سکتا ہوں کیا ... ؟؟😜😉

0 Komentar untuk "ایک دردناک تحریر"

Back To Top